ایکواڈورمیں خانہ جنگی پھوٹ پڑی ، ہنگامی حالت نافذ

ایکواڈور میں گینگسٹرز نے ٹی وی سٹوڈیو پرقبضہ اور یونیورسٹی پر حملہ کیا یہ گینگ منشیات کی سمگلنگ اور بھتہ خوری میں ملوث ہے-

صدر ڈینئل نوبوآ نے ملک میں داخلی مسلح تنازع سے نمٹنے کیلئے سڑکوں پر فوج بلالی اور ہنگامی حالت نافذکردی ہے،غیر ملکی میڈیا
کیوٹو : جنوبی امریکا کے ملک ایکواڈور کے شہر گویاکوئیل میں منشیات فروشوں کے خلاف کریک ڈاؤن کے بعد خانہ جنگی پھوٹ پڑی۔
غیر ملکی میڈیا کے مطابق ایکواڈور کے صدر ڈینئل نوبوآ نے ملک میں داخلی مسلح تنازع سے نمٹنے کیلئے سڑکوں پر فوج بلالی اور ہنگامی حالت نافذکردی ہے۔ایکواڈور میں گینگسٹرز نے ٹی وی سٹوڈیو پرقبضہ کرلیا اور یونیورسٹی پر حملہ کیا ہے جبکہ قیدیوں نے جیل گارڈز کو مبینہ طور پر قتل کردیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ایکواڈور میں گینگ لیڈر ایڈولفو فٹو کے جیل سے فرار اور بعد ازاں قتل کے بعد امن و امان کی صورتحال خراب ہوئی ہے۔گینگ لیڈر منشیات سمگلنگ کے جرم میں 34 برس کی سزا کاٹ رہا تھا اور ایک جیل سے ہائی سکیورٹی جیل میں منتقلی سے پہلے فرار ہوگیا تھا، یہ گینگ بنیادی طور پر منشیات کی سمگلنگ اور بھتہ خوری میں ملوث ہے اور اس کے میکسیکو کے طاقتور سینالووا کارٹیل کے ساتھ بھی تعلقات ہیں۔واضح رہے کہ ایکواڈور کے صدر ڈینیئل ملک کی تاریخ کے سب سے کم عمر صدر ہیں اور انھیں ابھی اپنے منصب کو سنبھالے دو ماہ سے کم عرصہ ہوا ہے ، وہ حال ہی میں ایک پرتشدد الیکشن مہم میں فاتح قرار دیے جانے کے بعد صدر بنے ہیں، اس انتخابی مہم کے دوران ہونے والے پُرتشدد واقعات میں ایک صدارتی انتخابی امیدوار فرنینڈو ویلاسینسؤ کو بھی قتل کیا گیا تھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں