لندن،ریاست مخالف سرگرمیوں میں ملوث 500 سے زائد پاکستانیوں کی شناخت ہو گئی

لندن:لندن میں ریاست مخالف سرگرمیوں میں ملوث 500 سے زائد اوورسیز پاکستانیوں کی شناخت ہو گئی، حکومت نے 9 مئی کے واقعات کی تحقیقات کو تارکین وطن پاکستانیوں تک بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ریاست مخالف پر ا پیگنڈا اور سرگرمیوں میں ملوث تمام تارکین وطن کیخلاف کارروائی کی جائے گی جو ان گھناؤنے واقعات کو اکسانے، بڑھاوا دینے اور مدد (جسمانی، اخلاقی اور مالی) کرنے میں ملوث پائے جائیں گے، اس حوالے سے 500 سے زائد پاکستانیوں کا ڈیٹا اکٹھا کیا جا چکا ہے، ان کے کال ریکارڈ، سوشل میڈیا سرگرمیاں، ٹریول ہسٹری، مالیاتی لین دین، امیگریشن سٹیٹس اور دیگر متعلقہ ڈیٹا کا تجزیہ کیا گیا ہے۔

پاکستانی حکام کے نوٹس میں یہ بھی آیا ہے کہ ان میں سے بعض سرغناؤں کو غیر ملکی انٹیلی جنس ایجنسیوں کی پشت پناہی اور مالی معاونت حاصل ہے، ایسے تمام افراد جب بھی پاکستان آئیں گے انہیں تحقیقات کا حصہ بنایا جائے گا، حکومت تمام ملوث افراد کیخلاف فوجداری کارروائی شروع کرے گی اور متعلقہ غیر ملکی حکومتوں سے مجرمان کی حوالگی کیلئے رابطہ کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق میزبان ممالک میں ان کی قانونی حیثیت، داخلے کا طریقہ کار اور زیر التوا دہری شہریت کی درخواستوں کو بھی کارروائی کا حصہ بنایا جائے گا، اس کے علاوہ ملوث افراد کی جانب سے غیر ملکی شہریت حاصل کرنے کیلئے استعمال کیے جانے والے جعلی طریقوں کی بھی تحقیقات کر کے ان کو بے نقاب کیا جائے گا، میزبان ممالک کو اس حوالے سے آگاہ کیا جائے گا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں